December 14th, 2019 (1441ربيع الثاني16)

عمومی سوالات

 

آپ.... کو یہ غلط فہمی [ہوئی] ہے کہ اقامت ِ دین کی سعی ہرحال میں صرف فرضِ کفایہ ہے۔ حالاں کہ یہ فرضِ کفایہ صرف اسی حالت میں ہے، جب کہ آدمی کے اپنے ملک یاعلاقے میں دین قائم ہوچکا ہو ، اور کفّار کی طرف سے اس دارالاسلام پر کوئی ہجوم نہ ہو، اور پیشِ نظر یہ کام ہو کہ آس پاس کے علاقوں میں بھی اقامت ِ دین کی سعی کی جائے۔ اس حالت میں اگر کوئی گروہ اس فریضے کو انجام دے رہا ہو، تو باقی لوگوں پر سے یہ فرض ساقط ہوجاتاہے اور معاملے کی نوعیت نمازِ جنازہ کی سی ہوتی ہے۔ لیکن اگر دین خود اپنے ملک ہی میں مغلوب ہو، اور خدا کی شریعت متروک و منسوخ کرکے رکھ دی گئی ہو، اور علانیہ منکرات اور فواحش کا ظہور ہو رہا ہو، اور حدود اللہ پامال کی جارہی ہوں، یا اپنا ملک دارالاسلام تو بن چکا ہو مگر اس پر کفّار کے غلبے کا اندیشہ پیدا ہوگیا ہو، تو ایسی حالتوں میں یہ فرضِ کفایہ نہیں بلکہ فرضِ عین ہوتا ہے، اور ہروہ شخص قابلِ مواخذہ ہوگا، جو قدرت و استطاعت کے باوجود اقامت ِ دین اور حفاظت ِ دین کے لیے جان لڑانے سے گریز کرے گا..... فقہ کی کتابوں میں جہاد کی بحث نکال کر دیکھ لیں کہ ہجومِ عدُو [دشمن کی یلغار]کی صورت میں جہاد فرضِ کفایہ ہے یا فرضِ عین۔ جس زمانے میں فقہ کی یہ کتابیں لکھی گئی تھیں، اُس وقت ممالک اسلامیہ میں سے کسی جگہ بھی اسلامی قانون منسوخ نہیں ہوا تھا اور نہ حدودِ شرعیہ معطل ہوئی تھیں۔ اس لیے انھوں نے صرف ہجوم عدو ہی کی حالت کا حکم بیان کیا تھا۔ لیکن، جب کہ مسلمانوں کے اپنے وطن میں کفر کا قانون نافذ اور اسلام کا قانون منسوخ ہو، اور اختیار ان لوگوں کے ہاتھ میں ہو جو حدود اللہ کی اقامت کو وحشیانہ فعل قرار دیتے ہیں، تو معاملہ ہجومِ عدُو کی نسبت کئی گنا زیادہ سخت ہوجاتا ہے، اور اس صورت میں کوئی شخص جو دین کا کچھ بھی فہم رکھتا ہو، اقامت ِ دین کی سعی کو محض فرضِ کفایہ نہیں کہہ سکتا۔ (’رسائل و مسائل‘ ،سیّدابوالاعلیٰ مودودی، ترجمان القرآن، جلد۴۸، عدد۴، شوال ۱۳۷۶ھ، جولائی ۱۹۵۷ء، ص ۵۶-۵۷)

جواب: تھکان کی بہت ساری وجوہات ہوتی ہیں جن میں ایک بغیر متوازن غذا ہے آپ اپنے ناشتے میں دودھ ، دہی اور دودھ سے بنی غذا کا استعمال کریں لسی بھی high protein غذا کے ساتھ کریں مثلاً انڈا یا چکن جس سے کیلشیم آپکی جسم میں زیادہ جذب ہو گا مذید یہ ہے کہ کیفین غذا کو جسم میں جذب نہیں ہونے دیتی اس کا استعمال کم سے کم کریں ،کولڈ ڈرنکس جسم سے 7 کپ دودھ کی غذائیت ضائع کر دیتی ہے تھکان اتارنے کے لئے نبیذ کا استعمال بھی بہت مفید ہے 4۔3 کھجوروں کو رات ایک گلاس پانی میں بھگو کر صبح پانی پی لیں اور کھجور بھی کھا لیں سا را دن تقویت رہے گی ۔

جواب: سب سے پہلے یہ جاننے کی کوشش کریں کہ آپ بار بار کیوں کھاتے ہیں کچھ لوگ صرف فارغ ہوں تھکے ہوئے ہوں یا کسی بھی جذبات میں زیادہ ہونے کی وجہ سے یا اکیلا پن دور کرنے کے لئے بھی کھاتے ہیں کوشش کریں کہ اپنی غذا متوازن کھائیں اور وہ اسنیکس اپنے لئے منتخب کریں جو صحت بخش ہوتے ہیں مثلاً پھل ، Nuts ، سلا ، سبزیاں ۔پہلے سے ہی منصوبہ بندی کریں کہ آپ اپنے لئے کونسا بہتر اسنیکس پسند کریں گی جب ہم چپس یاکوئی بھی junk food ٹی وی کے آگے بیٹھ کر کھاتے ہیں تو ہم کو احساس نہیں رہتا اور ہم زیادہ کھا جاتے ہیں

جواب: پھلوں سے افادیت بڑھانے کے لئے پھل اور کھانے کے استعمال میں کم ازکم آدھے گھنٹے کا وقفہ ہونا ضروری ہے ،بہترین بات یہ ہے کہ ایک یا دو گھنٹہ قبل از کھانا پھل لے لیں

جواب: مچھلی ، nuts، شکر قندی،کھیرا اور زیتون کا استعمال اپنی غزا میں شامل رکھیں اور پانی کی مقدار کو 3 لیٹر تک یقینی بنائیں